Digital Forensic, Research and Analytics Center

پیر, نومبر 28, 2022
spot_imgspot_imgspot_imgspot_img

Popular Posts

Latest

ہندو تنظیموں نے اسکولوں میں دعا کے بجائے ’ہندو بھجن‘ گانے کا مطالبہ؟ پڑھیں، فیکٹ چیک

سوشل میڈیا اکاؤنٹ، مرصد مسلمي الهند (@India__Muslim) مسلسل ہندوستان...

دہلی میں دو مسلمانوں نے ایک ہندو لڑکے کو کیا قتل؟ پڑھیں، فیکٹ چیک 

سوشل میڈیا پر ایک ویڈیو تیزی سے وائرل ہو...

کیا پاکستان نےکیا بلوچستان کے خلاف اعلان جنگ؟ پڑھیں، فیکٹ چیک 

پاکستان اور بلوچستان کے مابین جنگ کے حوالے سے...

فیکٹ چیک: کیا  حکومتِ ہند 3000 مساجد کو منہدم کرنے کا منصوبہ بنا رہی ہے؟

سوشل میڈیا پر ایک دعویٰ وائرل ہو رہا ہے...

فیکٹ چیک: ’انقلاب زندہ باد‘ کا نعرہ بھگت سنگھ نے نہیں، حسرت ؔموہانی نے دیا تھا

حال ہی میں دہلی کے وزیر اعلیٰ اروند کیجریوال نے کہا  تھاکہ بھگت سنگھ (Bhagat Singh) جی نے  ایک نعرہ دیا تھا ، آج میں ایک نعرہ دے رہا ہوں،انقلاب زندہ باد،سکشا کرانتی زندہ باد!(تعلیمی انقلاب زندہ باد!)۔

فیکٹ چیک:

وائرل ہورہے کیجروال کے اس  دعوے کا فیکٹ چیک کرنے پر  ہم نے پایا کہ انقلاب زندہ باد ( Inquilab Zindabad) کا نعرہ بھگت سنگھ (Bhagat Singh) نے نہیں بلکہ  سید فضل الحسن  عرف مولانا حسرتؔ موہانی (Hasrat Mohani) نے دیا تھا۔ حسرت موہانی (Hasrat Mohani)، مجاہد آزادی، شاعر، مصنف، صحافی،اسلامی اسکالر ، متحرک سماجی کارکن اور سیاستداں تھے۔ انہوں نے 1921 میں ہندوستان کے لیے ’پورن سوراج‘ (مکمل آزادی) کی تجویز پیش کی تھی۔

نتیجہ:

DFRAC کے فیکٹ چیک سے واضح ہے کہ وزیر اعلیٰ اروند کیجریوال کا دعویٰ غلط اور گمراہ کن ہے۔

دعویٰ : ’انقلاب زندہ باد‘ کا نعرہ  بھگت سنگھ نے دیا تھا۔

دعویٰ کنندہ: سی ایم اروند کیجریوال

فیکٹ چیک: گمراہ کن

(آپ DFRAC# کو ٹویٹر، فیسبک اور یوٹیوب پر فالو کر سکتے ہیں۔)