Digital Forensic, Research and Analytics Center

اتوار, نومبر 27, 2022
spot_imgspot_imgspot_imgspot_img

Popular Posts

Latest

ہندو تنظیموں نے اسکولوں میں دعا کے بجائے ’ہندو بھجن‘ گانے کا مطالبہ؟ پڑھیں، فیکٹ چیک

سوشل میڈیا اکاؤنٹ، مرصد مسلمي الهند (@India__Muslim) مسلسل ہندوستان...

دہلی میں دو مسلمانوں نے ایک ہندو لڑکے کو کیا قتل؟ پڑھیں، فیکٹ چیک 

سوشل میڈیا پر ایک ویڈیو تیزی سے وائرل ہو...

کیا پاکستان نےکیا بلوچستان کے خلاف اعلان جنگ؟ پڑھیں، فیکٹ چیک 

پاکستان اور بلوچستان کے مابین جنگ کے حوالے سے...

فیکٹ چیک: کیا  حکومتِ ہند 3000 مساجد کو منہدم کرنے کا منصوبہ بنا رہی ہے؟

سوشل میڈیا پر ایک دعویٰ وائرل ہو رہا ہے...

فیکٹ چیک:  یو اے ای کی بھارت کے گندم کی برآمد پر پابندی سے متعلق ساؤتھ ایشین جرنل کا گمراہ کن دعویٰ وائرل

متحدہ عرب امارات (UAE) نے بھارت سے درآمد کی جانے والی گندم (گیہوں) کی برآمد پر 4 ماہ کے لیے پابندی عائد کر دی ہے۔ یو اے ای کے اس فیصلے کے بعد سوشل میڈیا پر یوزرس نے اپنے ردعمل کا اظہار کیا۔ بہتیروں کا خیال ہے کہ یو اے ای نے بھارت سے گندم کی درآمد پر پابندی لگا دی ہے، جبکہ بہت سے لوگوں نے یو اے ای کے فیصلے کی وجہ  بی جے پی کی سابق ترجمان نوپور شرما کے پیغمبر اسلام ﷺ کے بارے میں متنازعہ بیان قرار دیاہے۔

پیغمبر اسلام ﷺ کے بارے میں  متنازعہ تبصرہ کے علاوہ کئی دیگر یوزرس  نے یو اے ای  کے اس فیصلے کی وجہ ہندوستانی مسلمانوں کو زد و کوب کرنے اور ان کے گھروں پر بلڈوزر چلائے جانے کو بھی قرار دیا ہے۔ ساؤتھ ایشین جرنل  (South Asian Journal) نے اپنے ٹویٹر اکاؤنٹ پر دعویٰ کیا تھا کہ یو اے ای نے بی جے پی کی سابق ترجمان نوپور شرما کے پیغمبر اسلام  ﷺکے بارے میں  متنازعہ بیان کے بعد بھارت سے گندم کی برآمد پر پابندی لگا دی ہے۔ اس نے خلیج ٹائمس کی ایک رپورٹ کو  کیپشن ،’ یو اے ای  نے بھارتی گندم کی برآمد پر پابندی عائد کردی ہے۔ یہ فیصلہ پیغمبر اسلام  ﷺکی توہین اور بھارت میں مسلمانوں ظلم وستم کا نشانہ بنانے اوران کے گھروں کو مسمار کرنے کے بعد آیا ہے‘ کے ساتھ شیئر کیا ہے۔

 

جلد ہی یہ ٹویٹ سو سے زیادہ ری ٹویٹس کے ساتھ وائرل ہو گیا۔

 فیکٹ چیک:

وائرل ہورہے دعوے کے لیے ہم نے گوگل پر ایک سمپل سرچ کیا۔ ہمیں’ آج تک‘کی ویب سائٹ پر ایک رپورٹ ملی ۔ اس رپورٹ میں واضح طور پر بتایا گیا ہے کہ یو اے ای نے بھارت سے خریدی گئی گندم یا آٹے کی ، دیگر ممالک کو برآمد پر 4 ماہ کے لیے پابندی عائد کر دی ہے۔ اس رپورٹ میں یہ بھی لکھا گیا ہے کہ یو اے ای نے یہ فیصلہ حکومت ہند کی درخواست پر ہی کیا ہے۔ کیونکہ بھارت چاہتا ہے کہ اس کی طرف سے یو اے ای کو برآمد کی جانے والی گندم اس کی گھریلو کھپت کے لیے استعمال کی جائے۔

وہیں، جب ہم نے خلیج ٹائمس کی رپورٹ کو دیکھا تو پایا کہ رپورٹ میں بتایا گیا  ہےکہ وزارت خزانہ نے وضاحت کی ہےکہ یہ فیصلہ انٹرنیشنل ڈیویلپمنٹ کو مدنظر رکھتے ہوئے کیا گیا ہے جس سے تجارتی روانی متاثر ہوئی ہے۔ دونوں ممالک یو اے ای اور بھارت کو باہم مربوط کرنے والے ٹھوس اور اسٹریٹجک تعلقات کی تعریف کرتے ہیں۔ دونوں ممالک کے درمیان جامع اقتصادی شراکت داری کا معاہدہ (CEPA) اور گھریلو استعمال کے لیے یو اے ای کو گندم برآمد کرنے کے لیے حکومت ہند کی منظوری ملی ہے۔

نتیجہ:

اس لیے یہ واضح ہے کہ ساؤتھ ایشین جرنل کا دعویٰ گمراہ کن ہے۔ اس میں بہت سی گمراہ کن باتوں کا فیکٹ چیک سامنے آ رہا ہے، جو درج ذیل ہیں۔

  • یو اے ای نے بھارت سے گندم کی درآمد پر کوئی پابندی نہیں لگائی ہے۔
  • یو اے ای نے بھارت سے درآمد کی جانے والی گندم یا آٹے کی کسی دوسرے ملک کو برآمد پر پابندی عائد کر دی ہے۔
  • فی الحال یہ پابندی صرف 4 ماہ کے لیے عائد کی گئی ہے۔
  • یو اے ای نے یہ فیصلہ حکومت ہند کی درخواست پر کیا ہے۔
  • یو اے ای کے بھارتی گندم کی برآمدات پر پابندی کا ہندوستان میں پیغمبر اسلام ﷺ پر بی جے پی کے ترجمان کے متنازعہ بیان سے کوئی تعلق نہیں ہے۔
دعویٰ: یو اے ای نے بھارت سے گندم کی برآمد پر لگائی پابندی

دعویٰ کنندگان: ساؤتھ ایشین جرنل اور دیگر یوزرس

فیکٹ چیک: گمراہ کن

(آپ DFRAC# کو ٹویٹر، فیسبک اور یوٹیوب پر فالو کر سکتے ہیں۔)