Digital Forensic, Research and Analytics Center

اتوار, نومبر 27, 2022
spot_imgspot_imgspot_imgspot_img

Popular Posts

Latest

ہندو تنظیموں نے اسکولوں میں دعا کے بجائے ’ہندو بھجن‘ گانے کا مطالبہ؟ پڑھیں، فیکٹ چیک

سوشل میڈیا اکاؤنٹ، مرصد مسلمي الهند (@India__Muslim) مسلسل ہندوستان...

دہلی میں دو مسلمانوں نے ایک ہندو لڑکے کو کیا قتل؟ پڑھیں، فیکٹ چیک 

سوشل میڈیا پر ایک ویڈیو تیزی سے وائرل ہو...

کیا پاکستان نےکیا بلوچستان کے خلاف اعلان جنگ؟ پڑھیں، فیکٹ چیک 

پاکستان اور بلوچستان کے مابین جنگ کے حوالے سے...

فیکٹ چیک: کیا  حکومتِ ہند 3000 مساجد کو منہدم کرنے کا منصوبہ بنا رہی ہے؟

سوشل میڈیا پر ایک دعویٰ وائرل ہو رہا ہے...

فیکٹ چیک: کیا آر بی آئی کے گورنر نے ڈیجیٹل والیٹ فراڈ کی بات کی؟

ریزرو بینک آف انڈیا (آر بی آئی)کے گورنر شکتی کانت داس کا ایک ویڈیو سوشل میڈیا پر وائرل ہو رہا ہے۔ اس ویڈیو میں انھیں فون چوری اور ڈیجیٹل والیٹ دھوکہ دہی کے معاملے میں والیٹ کھاتے کو بلاک کرنے کی تدابیر کے بارے میں بات کرتے ہوئے سنا جا سکتا ہے۔ وائرل ویڈیو میں انھیں گوگل پے، فون پے، اور پے ٹی ایم کے کچھ ہیلپ لائن نمبر شیئر کرتے ہوئے بھی سنا جا سکتا ہے۔ 

ٹویٹر پر ایک یوزر نے ویڈیو کو کیپشن کے تحت شیئر کیا،’#DigitalPayment #phonepe #GPay #Paytm #security #RBI‘۔

فیکٹ چیک:

وائرل دعوے کی جانچ پڑتال کے لیے DFRAC  ٹیم نے ویڈیو کو باریکی سے دیکھا اور پایا کہ ویڈیو کے بیک گراؤںڈ کی آواز، گورنر شکتی کانت داس کے ادا کیے گئے الفاظ کے ساتھ میل نہیں کھا رہی ہے۔ وہیں گورنر شکتی کانت داس کے پیچھے لگا ہمیں آر بی آئی کا لوگو ملا۔ پھر ہم نے ویڈیو کے مختلف فریم کو سرچ کیا جس کے نتیجے میں سامنے آیا کہ اوریجینل ویڈیو کو آر بی آئی کے یوٹیوب چینل پر پانچ مئی 2021 کو اپلوڈ کیا گیا تھا۔ اس ویڈیو میں شکتی کانت داس کو کورونا وبا کے بعد بھارت کی معیشت کے بارے میں بات کرتے ہوئے سنا جا سکتا ہے۔ 

نتیجہ:

وائرل ویڈیو کا فیکٹ چیک کرنے کے بعد واضح ہو رہا ہے کہ یہ ویڈیو ایک سال پرانا ہے اور اس ویڈیو میں شکتی کانت داس بھارت کی معیشت کے بارے میں بات کر رہے ہیں۔ آر بی آئی گورنر کے اس ویڈیو کو ایڈٹ کرکے اس میں دوسرا آڈیو ایڈ کیا گیا ہے۔ اس لیے سوشل میڈیا یوزرس کا دعویٰ غلط ہے۔ 

دعوی: ڈیجیٹل والیٹ فراڈ کے بارے میں بات کرنے والے آر بی آئی گورنر 

دعویٰ کنندگان: سوشل میڈیا یوزرس

فیکٹ چیک: فیک