Digital Forensic, Research and Analytics Center

پیر, نومبر 28, 2022
spot_imgspot_imgspot_imgspot_img

Popular Posts

Latest

ہندو تنظیموں نے اسکولوں میں دعا کے بجائے ’ہندو بھجن‘ گانے کا مطالبہ؟ پڑھیں، فیکٹ چیک

سوشل میڈیا اکاؤنٹ، مرصد مسلمي الهند (@India__Muslim) مسلسل ہندوستان...

دہلی میں دو مسلمانوں نے ایک ہندو لڑکے کو کیا قتل؟ پڑھیں، فیکٹ چیک 

سوشل میڈیا پر ایک ویڈیو تیزی سے وائرل ہو...

کیا پاکستان نےکیا بلوچستان کے خلاف اعلان جنگ؟ پڑھیں، فیکٹ چیک 

پاکستان اور بلوچستان کے مابین جنگ کے حوالے سے...

فیکٹ چیک: کیا  حکومتِ ہند 3000 مساجد کو منہدم کرنے کا منصوبہ بنا رہی ہے؟

سوشل میڈیا پر ایک دعویٰ وائرل ہو رہا ہے...

مسلم یونیورسٹیوں سے 148 اور ہندو یونیورسٹیوں سے صرف 2 UPSC میں امتحان کامیاب!، پڑھیں، فیکٹ چیک

سوشل میڈیا سائٹس پر ایک تصویر وائرل ہو رہی ہے۔ اس تصویر میں لال مرچے کو دکھایا گیا ہے۔ یہ بھی لکھا ہے کہ یونین پبلک سروس کمیشن (UPSC) میں بنارس ہندو یونیورسٹی (BHU) کے صرف دو امیدوار کامیاب ہوئے ہیں جبکہ مسلم یونیورسٹیوں بڑی تعداد میں طلبہ کامیاب ہوئے ہیں۔
رن وجے کمار سنگھ نے فیس بک پر ایک تصویر شیئر کی۔ اس تصویر میں لکھا گیا ہے،’ کل UPSC میں منتخب 685 میں مسلم یونیورسٹی؛ جامعہ-93، اے ایم یو-33، عثمانیہ-22، دیش دروہی (غدار وطن) یونیورسٹی جے این یو-53، ہندو یونیورسٹی بی ایچ یو-2… بچے برباد کہاں کے ہو رہے ہیں؟‘ ساتھ ہی ٹیکسٹ کے اوپر اور نیچے لال مرچے کوطنزیہ دکھایا گیا ہے۔

Facebook Screenshot

فیکٹ چیک:

انٹرنیٹ پر ہم نے اس حوالے سے کچھ خاص ’کی ورڈ‘ سرچ کیے۔ اس دوران ہمیں جامعہ ملیہ اسلامیہ کے ویریفائیڈ ٹویٹر اکاؤنٹ سے 30 مئی 2022 کو ایک ٹویٹ ملا۔ اس ٹویٹ میں بتایا گیا ہے کہ جامعہ کے کل 23 امیدوار یو پی ایس سی امتحان میں کامیاب ہوئے ہیں۔ تصاویر میں دیکھا جا سکتا ہے کہ وی سی نجمہ اختر، جامعہ آر سی اے کی طالبہ، UPSC 2021 کی ٹاپر شروتی شرما کو مبارکباد دے رہی ہیں۔

انڈین ایکسپریس نے بھی اسے سرخی،’UPSC CSE Rrsult 2021: جامعہ آر سی اے کے 23 امیدوار سول سروسز کے امتحان میں کامیاب- (اردو ترجمہ)‘ کے ساتھ کور کیا ہے۔ غور طلب ہے کہ جامعہ آر سی اے سے کامیاب ہوننے والوں میں تمام مذاہب کے طلبہ شامل ہیں۔


علی گڑھ مسلم یونیورسٹی (اے ایم یو) کے صرف ایک طالب علم نے یو پی ایس سی میں کامیابی حاصل کی ہے۔
عثمانیہ یونیورسٹی حیدرآباد کے تین طلبہ نے یو پی ایس سی 2021 میں کامیابی حاصل کی ہے۔

دی نیو انڈین ایکسپریس نے سرخی،’UPSC CSE 2021 Result: ٹاپ 100 میں تلنگانہ اور آندھرا پردیش کے چھ امیدوار- (اردو ترجمہ)‘کے ساتھ ایک اسٹور پبلش کی ہے، جس کے مطابق کرنمئی کوپیسیٹی کے علاوہ، دو دیگر ڈاکٹر- ڈاکٹر سید مصطفیٰ ہاشمی نے 2018 میں عثمانیہ میڈیکل کالج حیدرآباد سے گریجویشن کیا اور ڈاکٹر پرسنّ کمار وی نے بھی اس سال امتحان میں کامیابی حاصل کی۔


بنارس ہندو یونیورسٹی (BHU) کے بارے میں، ہمیں پتریکا کی ویب سائٹ پر ایک اسٹوری ملی، جس کا عنوان ہے،’یو پی ایس سی میں بنارس کے دو طلبہ کا بجا ڈنکا، پہلی ہی کوشش میں آئی اے ایس بنے دیویش تو لگاتار دوسری بار کامیاب ہوئے آنند‘۔(اردو ترجمہ)

وہیں، ذرائع سے موصولہ معلومات کے مطابق، آئی آئی ٹی۔بی ایچ یوکے 17 طلبہ نے UPSC 2021 کے امتحان میں کامیابی حاصل کیا ہے۔
اس طرح بی ایچ یو سے کل 19 طلبہ نے یو پی ایس سی امتحان میں کامیابی کا علم بلند کیا ہے۔
ہمیں جواہر لال نہرو یونیورسٹی (جے این یو) کے حوالے سے معتمد ذرائع سے یہ اطلاعات نہ مل سکیں کہ یہاں سے کتنے طلبہ نے یو پی ایس سی پاس کیا ہے۔ اندازہ ہے کہ ہر بار کی طرح اس بار بھی جے این یو سے ایک اچھی تعداد نے یو پی ایس سی کلیئر کیا ہوگا۔

نتیجہ:

DFRAC کے اس فیکٹ چیک سے واضح ہے کہ یوزر کی جانب سے کیا جانے والا یہ دعویٰ کہ جامعہ، اے ایم یو اور عثمانیہ کے 148 طلبہ نے یو پی ایس سی کے امتحان کامیاب ہوئے ہیں، غلط اور گمراہ کن ہے۔
اگر رپورٹس پرنظر ڈالی جائے تو اس بار مسلم امیدواروں کا اس بار سکسیز ریٹ گذشتہ 10 برسوں میں سب سے خراب ہے۔ UPSC 2021 میں 685 کامیاب امیدواروں میں محض 25 مسلم طلبہ ہی ہیں۔

 

سال

کل کامیاب امیدوار مسلم امیدوار

2020

761 31
2019 829 42

2018

485 27
2017 990 50

2016

1099 52
2015 1,078 34
2014 1,236

38

دعویٰ: اے ایم یو سے 33 اور بی ایچ یو سے 2 امیدوار یو پی ایس سی میں ہوئے کامیاب
دعویٰ کنندگان: سوشل میڈیا یوزرس
فیکٹ چیک: گمراہ کن

(آپ DFRAC# کو ٹویٹر، فیسبک اور یوٹیوب پر فالو کر سکتے ہیں۔)