Digital Forensic, Research and Analytics Center

بدھ, نومبر 30, 2022
spot_imgspot_imgspot_imgspot_img

Popular Posts

Latest

فیکٹ چیک: کیا کشمیر میں تین لاکھ کشمیری ہندوؤں کا قتل عام؟ اشوک پنڈت نے کیا فیک دعویٰ

گوا میں جاری انٹرنیشنل فلم فیسٹیول آف انڈیا (IFFI)...

فیکٹ چیک: ڈونلڈ ٹرمپ کے پوسٹ کا فیک اسکرین شاٹ وائرل

ڈونلڈ ٹرمپ کے پوسٹ کا ایک اسکرین شاٹ سوشل...

آن لائن اسکین الرٹ: قطر نہیں دے رہا 50GB فری ڈیٹا- پڑھیں فیکٹ چیک

سوشل میڈیا پر ایک پوسٹ شیئر کرکے دعویٰ کیا...

فیکٹ چیک: ’36 ٹکڑےکرنے‘ کا بیان دینے والا راشد خان نہیں، وکاس کمار ہے

شردھا واکر کو اس کے پارٹنر آفتاب پونہ والا...

فیکٹ چیک: چین کا زنگ آلود (الیکٹرک) کاروں کا قبرستان گمراہ کن طور پر فرانس کا بتایا جا رہا ہے!

سوشل میڈیا سائٹس پر ایک تصویر وائرل ہو رہی ہے۔ سوشل میڈیا یوزرس اس تصویر کو شیئر کرتے ہوئے دعویٰ کر رہے ہیں کہ فرانس میں زنگ آلود کاروں سے بھرا کباڑ خانہ ہے۔

Source: Twitter

@DavidWolfe نامی ایک ویریفائیڈ ٹویٹر یوزر نے تصویر کو اس کیپشن کے ساتھ شیئر کیا کہ فرانس: سرکاری ملازمین کے لیے الیکٹرک کار خریدی لیکن بیٹری کو بدلنا بہت مہنگا تھا۔ اس کے بعد کسی اور کو یہ گاڑی نہیں چاہیے تھی۔ اب وہ یہاں ہیں۔

DL Theune نامی ایک دیگر یوزر نے اسی تصویر کو اسی طرح کے کیپشن کے ساتھ شیئر کیا،’یہ ہے فرانس میں الیکٹرک کار کا ایک قبرستان۔ بیٹری ختم ہو جاتی ہے تو کوئی بھی استعمال کی ہوئی الیکٹرک کار نہیں خریدنا چاہتا‘۔ 

Source: Facebook

سینڈی پاویل نامی ایک ٹویٹر یوزر نے اس تصویر کو کیپشن کے ساتھ شیئر کیا،’بیٹری فیلیئر سے فرانس میں الیکٹرک کار کا قبرستان۔ حالانکہ ایک پیارا میوزیم بنتا ہوا #liveline‘۔

Source: Twitter

ایک انسٹاگرام یوزر گریگ نے ایک ایسی ہی تصویر کو کیپشن،’میں نہیں چاہتا کہ جگہ کو ٹریش کیا جائے۔ میں لوکیشن شیئر نہیں کرتا۔ برائے مہربانی اس کا حترام کریں‘۔

Source: Instagram

 

فیکٹ چیک:

DFRAC ٹیم نے وائرل تصویر کے حوالے سے کیے گئے دعوؤں کی جانچ-پڑتال کرنے کے لیے گوگل پر  اسے ریورس امیج سرچ کیا۔ ٹیم کو اس دعوے کو کور کرنے والے کئی میڈیا ہاؤسز کی رپورٹس ملی ہیں۔ اس دوران ٹیم کو گلوبل ٹائمس میں ایک آرٹیکل ملا۔ آرٹیکل کا عنوان مشرقی چین کے صوبہ ژی جیانگ کے شہر ہانگژو کی تصویر: مشرقی چین کے صوبہ ژی جیانگ کے شہر ہانگژو میں کرائے کے لیے کنڈی کی الیکٹرک کاریں۔

Source: Global Times

اس کے علاوہ، ٹیم کو ہانگژو میں زنگ آلود کاروں کے سلسلے میں r/climatedisalarm کی طرف سے شیئر کیا گیا ایک کیپشن بھی ملا۔دیکھو: ہانگژو میں ’مشترکہ کار قبرستان‘ میں سینکڑوں الیکٹرک کاریں زنگ کھا رہی ہیں۔

Source: Reddit

نتیجہ:

DFRAC کے اس فیکٹ چیک سے واضح ہے کہ وائرل تصویر فرانس کی نہیں بلکہ چین کے ہانگژو کی ہے۔ اس لیے سوشل میڈیا یوزرس کا دعویٰ گمراہ کن ہے۔

دعوی: چین کا زنگ آلود کاروں کا قبرستان گمراہ کن طور پر فرانس کا بتایا جا رہا ہے

دعویٰ کنندگان: سوشل میڈیا یوزرس

فیکٹ چیک: گمراہ کن