Digital Forensic, Research and Analytics Center

بدھ, نومبر 30, 2022
spot_imgspot_imgspot_imgspot_img

Popular Posts

Latest

فیکٹ چیک: کیا کشمیر میں تین لاکھ کشمیری ہندوؤں کا قتل عام؟ اشوک پنڈت نے کیا فیک دعویٰ

گوا میں جاری انٹرنیشنل فلم فیسٹیول آف انڈیا (IFFI)...

فیکٹ چیک: ڈونلڈ ٹرمپ کے پوسٹ کا فیک اسکرین شاٹ وائرل

ڈونلڈ ٹرمپ کے پوسٹ کا ایک اسکرین شاٹ سوشل...

آن لائن اسکین الرٹ: قطر نہیں دے رہا 50GB فری ڈیٹا- پڑھیں فیکٹ چیک

سوشل میڈیا پر ایک پوسٹ شیئر کرکے دعویٰ کیا...

فیکٹ چیک: ’36 ٹکڑےکرنے‘ کا بیان دینے والا راشد خان نہیں، وکاس کمار ہے

شردھا واکر کو اس کے پارٹنر آفتاب پونہ والا...

افغانستان: زلزلے میں بال بالبچ جانے والے بچے کی وائرل تصویر کی حقیقت، پڑھیں، فیکٹ چیک

ملبے کے درمیان ایک چھوٹے بچے کی تصویر انٹرنیٹ پر وائرل ہو رہی ہے۔ سوشل میڈیا  یوزرس دعویٰ کر رہے ہیں کہ افغانستان میں آئے شدید زلزلے میں بچہ بال بال بچ گیا۔

 ایک سوشل میڈیا یوزر @Zabih_Uallah نے تصویر شیئر کرتے ہوئے کیپشن میں لکھا، “افغانستان زلزلے کے بعد تقریباً 24 گھنٹے تک ملبے تلے دبا رہا اور رب کے فضل و کرم سے زندہ پایا گیا۔

اسی طرح کئی دیگر یوزرس نے بھی اسی دعوے کے ساتھ اس تصویر کو شیئر کیا ہے۔

فیکٹ چیک:

انٹرنیٹ پر ریورس امیج سرچ کرنے پر ہمیں یہی تصویر almasdaronline کی ویب سائٹ پر ملی۔ اس تصویر پر 10 دسمبر 2015 کو سرخی ، “یمن کے کارکنان،  یمن مذاکرات میں شرکاء کو  ایک پیغام بھیجا : جنگ بند کرو ۔” کے تحت شائع مضمون میں استعمال کیا گیا تھا، لہٰذا یہ تصویر پرانی ہے اور افغانستان زلزلے کی نہیں ہے۔

اس کے علاوہ، ہمیں 6 جنوری 2015 کی اسی تصویر کلے ساتھ فیس بک پوسٹ بھی ملا۔ تصویر کا کیپشن عربی میں تھا جسے اردو میں اس طرح ترجمہ کیا جا سکتا ہے، “میرا یہاں ایک گھر تھا۔ انہوں نے اسے تباہ کر دیا اور مجھے بے گھر کر دیا”۔

نتیجہ:

DFRAC کے اس فیکٹ چیک سے واضح ہے کہ یہ تصویر افغانستان کی نہیں بلکہ یمن کی ہے، اس لیے یوزرس، اسے گمراہ کن دعوے کے ساتھ شیئر کر رہے ہیں۔

دعویٰ: افغانستان ، زلزلے میں بال بال بچا  ایک بچہ

دعویٰ کنندگان: سوشل میڈیا یوزرس

فیکٹ چیک: گمراہ کن