Digital Forensic, Research and Analytics Center

پیر, نومبر 28, 2022
spot_imgspot_imgspot_imgspot_img

Popular Posts

Latest

ہندو تنظیموں نے اسکولوں میں دعا کے بجائے ’ہندو بھجن‘ گانے کا مطالبہ؟ پڑھیں، فیکٹ چیک

سوشل میڈیا اکاؤنٹ، مرصد مسلمي الهند (@India__Muslim) مسلسل ہندوستان...

دہلی میں دو مسلمانوں نے ایک ہندو لڑکے کو کیا قتل؟ پڑھیں، فیکٹ چیک 

سوشل میڈیا پر ایک ویڈیو تیزی سے وائرل ہو...

کیا پاکستان نےکیا بلوچستان کے خلاف اعلان جنگ؟ پڑھیں، فیکٹ چیک 

پاکستان اور بلوچستان کے مابین جنگ کے حوالے سے...

فیکٹ چیک: کیا  حکومتِ ہند 3000 مساجد کو منہدم کرنے کا منصوبہ بنا رہی ہے؟

سوشل میڈیا پر ایک دعویٰ وائرل ہو رہا ہے...

ایم پی کے ضلع کٹنی میں مسلم امیدوار کی جیت پر لگے’پاکستان زندہ باد‘ کے نعرے ؟ پڑھیں ،فیکٹ چیک

سوشل میڈیا پر ایک ویڈیو وائرل ہو رہا ہے۔ اس وائرل  ویڈیو میں دعویٰ کیا جا رہا ہے کہ ایک مسلم خاتون کے پنچایت الیکشن جیتنے کے بعد ان کے حامیوں نے ’پاکستان زندہ باد‘ کے نعرے لگائے۔ سوشل میڈیا یوزرس اس واقعہ کو مدھیہ پردیش کے ضلع کٹنی کی چاکا نیا ئےپنچایت کا بتا رہے ہیں۔ رحیسہ (رئیسہ) خان اہلیہ واجد خان نے چ یہاں سے الیکشن میں جیت درج کی ہے۔

ہندی روزنامہ ’ دینک بھاسکر‘ نے رحیسہ خان کی جیت پر لگے ’پاکستان زندہ باد‘ کے نعرے لگانے کے واقعے کو کور کیا ہے۔

Archive Link

وہیں دینک جاگرن نے بھی اس خبر کو پبلش کیا ہے۔

فیکٹ چیک:

’پاکستان زندہ باد‘ کے نعرے کی ویڈیو سوشل میڈیا پر وائرل ہوتے ہی کٹنی پولیس حرکت میں آگئی۔ پولیس فی الحال اس ویڈیو کی تحقیقات کر رہی ہے۔ وہیں ایک ویڈیو چاکا کی نو منتخب سرپنچ رحیسہ خان کے شوہر واجد خان کا وائرل ہو رہا ہے۔  اس ویڈیو میں واجد خان دعویٰ کر رہے ہیں کہ ان کے حامیوں نے’ پاکستان زندہ باد‘ کے نعرے نہیں لگائے۔ ان کا کہنا ہے کہ ان کے حامی ’واجد بھائی زندہ باد‘ کے نعرے لگا رہے ہیں۔ ساتھ ہی وہ یہ بھی نعرہ  لگا رہے ہیں کہ ’’جیت گیا بھائی جیت گیا – واجد بھائی جیت گیا‘‘۔

 

وہیں کٹنی کے اے ایس پی وجے پرتاپ سنگھ نے بتایا کہ کچھ لوگ واجد کے گھر احتجاج کرنے گئے تھے، جنھیں بزور ہٹا دیا گیا۔

’ویڈیو کی تحقیقات کی جا رہی ہیں۔ سچائی کی بنیاد پر کارروائی کی جائے گی اور اگر ویڈیو جھوٹی پائی گئی تو شکایت کنندہ کے خلاف بھی کارروائی کی جائے گی‘: اے ایس پی سنگھ

نتیجہ:

DFRAC کے اس فیکٹ چیک سے ثابت ہو رہا ہے کہ پاکستان زندہ باد کے نعرے لگائے جانے کی پولیس ابھی تحقیقات کر رہی ہے۔ تفتیش   کے بعد ہی صورتحال واضح ہوگی کہ نعرے لگائے گئے یا نہیں۔ وہیں واجد خان اور ان کے حامی اس  طرح کی نعرہ بازی سے انکار کر رہے ہیں۔ اس معاملے میں افسوسناک پہلو یہ ہے کہ میڈیا نے بے حسی کا مظاہرہ کیا۔ میڈیا نے ویڈیو کی تصدیق کیے بغیرہی  ’پاکستان زندہ باد‘ کے نعرے کی خبریں چلا دیں۔

نوٹ:اس فیکٹ چیک کوپولیس کی تحقیقاتی رپورٹ آنے کے بعد اپڈیٹ کیا جائے گا‘۔