Digital Forensic, Research and Analytics Center

بدھ, نومبر 30, 2022
spot_imgspot_imgspot_imgspot_img

Popular Posts

Latest

فیکٹ چیک: کیا کشمیر میں تین لاکھ کشمیری ہندوؤں کا قتل عام؟ اشوک پنڈت نے کیا فیک دعویٰ

گوا میں جاری انٹرنیشنل فلم فیسٹیول آف انڈیا (IFFI)...

فیکٹ چیک: ڈونلڈ ٹرمپ کے پوسٹ کا فیک اسکرین شاٹ وائرل

ڈونلڈ ٹرمپ کے پوسٹ کا ایک اسکرین شاٹ سوشل...

آن لائن اسکین الرٹ: قطر نہیں دے رہا 50GB فری ڈیٹا- پڑھیں فیکٹ چیک

سوشل میڈیا پر ایک پوسٹ شیئر کرکے دعویٰ کیا...

فیکٹ چیک: ’36 ٹکڑےکرنے‘ کا بیان دینے والا راشد خان نہیں، وکاس کمار ہے

شردھا واکر کو اس کے پارٹنر آفتاب پونہ والا...

فیکٹ چیک: کیا پوتن نے اسلام کو روس کا دوسرا ریاستی مذہب قرار دیا؟

سوشل میڈیا پر ایک پوسٹ بہت وائرل ہو رہی ہے، جس میں دعویٰ کیا گیا کہ روسی صدر ولادیمیر پوتن نے اسلام کو روس کا دوسرا ریاستی مذہب قرار دیا ہے۔

ایک فیس بک یوزر نے اپنی پوسٹ میں ایک تصویر شیئر کرتے ہوئے لکھا ،’ پوتن نے اسلام کو روس کا دوسرا مذہب کہہ کر اسلام پرعائد تمام پابندیاں ختم کر دیں…اللہ اکبر‘۔

فیکٹ چیک:

مذکورہ بالا دعوے کی جانچ پڑتال کے لیے، ہم نے پہلے گوگل پر روس، اسلام، ولادیمیر پوتن جیسے ’کی ورڈ‘سرچ کرکے اس بابت خبریں ڈھونڈیں۔ لیکن ہمیں ایسی کوئی خبر نہیں ملی۔ اگر ایسا ہوتا تو کوئی خبر رساں ایجنسی (نیوز ایجنسی) اس بابت ضرور خبر دیتی۔

پھر ہماری DFRAC کی ٹیم نے پوسٹ میں شیئر کی گئی تصویر کو ریورس امیج سرچ کیا تو پایا کہ یہ تصویر 2012 کی ہے۔ خبر رساں ادارے (نیوز ایجنسی) روئٹرز کے مطابق یہ تصویر خطے کے اعلیٰ مذہبی رہنما مفتی الدوس فیضوف کے اعزاز میں ایک تقریب کے دوران لی گئی تھی، جو 19 جولائی کو ایک کار بم دھماکے میں زخمی ہو گئے تھے۔

وہیں روس کے آئین کے آرٹیکل 14 کے مطابق:
1) روسی فیڈریشن ایک سیکولر(لادینی) ریاست ہوگی، جہاں کسی بھی مذہب کو ریاستی مذہب یا لازمی قرار نہیں دیا جاسکتا ہے۔
2) مذہبی انجمنیں (تنظیمیں) ریاست سے الگ ہوں گی اور قانوناً برابر ہوں گی۔

نتیجہ:

DFRAC کے اس فیکٹ چیک سے واضح ہوتا ہے کہ پوتن کی جانب سے دین اسلام کو روس کا دوسرا ریاستی مذہب قرار دیے جانے کا دعویٰ فرضی ہے۔

دعویٰ: پوتن نے اسلام کو روس کا دوسرا ریاستی مذہب قرار دیا
دعویٰ کنندگان: سوشل میڈیا یوزر
فیکٹ چیک: فیک

(آپ DFRAC# کو ٹویٹر، فیسبک اور یوٹیوب پر فالو کر سکتے ہیں۔)